عید کا اعلان سب سے پہلے کہاں ہوا؟رویت ہلال کا نیا طریقہ


By Farman Nawaz

یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان کے مشرق اور مغرب میں مسلمان ممالک نے عید منائی لیکن پنجاب اور سندھ سرکاری خرچے پر چلنے والی رویت ہلاک کمیٹی کے اعلان کا انتظار کر رہے ہیں۔ شکایت یہ کی جاتی ہے کہ ملک میں دو عیدوں کی روایت برقرار رہی۔پنجاب اور سندھ اُمت مسلمہ کے ساتھ عید نہیں منانا چاہتے تو اس میں پختونوں کا کیا قصور۔
مفتی پاپلزئی کی گمشدگی کی خبر پنجابی میڈیا میں جگہ نہیں بنا سکی لیکن اُن کے ہوائی جہاز کے ٹکٹ کو خصوصی کوریج دی گئی۔نامعلوم علماء کے فتویٰ کی خبر بھی نشر کی گئی کہ اتوار کو عید غیر اسلامی ہوگی۔پنجاب نے پوری دنیا کے عیدوں کو غیر اسلامی قرار دیا۔
یہ بات نوٹ کرنے کی ہے کہ جب متحدہ ہندوستان تھا تب بھی عید اکھٹی نہیں منائی جاتی تھی۔
روزنامہ دی نیوز کے مطابق سب سے پہلے بنوں میں بارہ رکنی پرائیویٹ رویت ہلال کمیٹی نے عید کا اعلان کیا۔اس کے بعد مردان اور چارسدہ میں اعلان ہوا۔
پنجاب کو یہ بات سمجھ آگئی ہوگی کہ مفتی صاحب کے نہ ہونے سے بھی پٹھان عید کا اعلان کر سکتے ہیں۔پی ٹی آئی پنجاب کے ساتھ چلنے کی بجائے اگر اپنی صوبائی حکومت کی طرف داری کرے تو اچھا ہوگا۔ مفتی صاحب تو چلو دوبئی چلے گئے لیکن یہ جو باقی علماء گرفتار ہوئے ہیں وہ کس نے کئے۔
اگلی بار اگر ضرورت ہوئی تو پٹھان سوشل میڈیا پر بھی پختون رویت ہلال کمیٹی کا گروپ بنا سکتے ہیں جو نہ صرف مصدقہ شہادتیں لے گا بلکہ عید کا علان بھی کرے گا۔ جس نے بھی چاند دیکھا ہوگا وہ اپنی ویڈیو اُس گروپ میں پوسٹ کرے گا اور اپنا شناختی کارڈ ، نام اور پتہ بتائے گا۔مفتی صاحبان آن لائن اُس کی شہادت کومنظور یا نا منظور کر سکتے ہیں۔
جب پاکستان کی عدالت میمو گیٹ جیسے نازک مسئلے کیلئے آن لائن گواہی لے سکتی ہے تو رویت ہلال کیلئے کیوں نہیں۔ٹیلی فون پر بھی تو شہادتیں موصول ہوتی ہیں تو سوشل میڈیا پر کیوں نہیں۔گھر بیٹھے رویت کا مسئلہ حل ہو سکتا ہے۔نہ پولیس بیچاروں کو در در جا کر علماء کو اُٹھانا پڑے گا اور نہ علماء کو ڈر ڈر کر اعلانات کرنے پڑے گے۔
ویسے حکومت ایک دن عید منانا کیوں چاہتی ہے؟ کبھی پورے پاکستان میں ضرورت کی اشیاء کی مناسب قیمتوں کیلئے تو حکومت اتنی مخلص دکھائی نہیں دی۔کبھی مہنگی ہنگی دوائیوں کا نوٹس تو نہیں لیا گیا۔ویسے رویت ہلال کیلئے اسلامی نظریاتی کونسل کیوں کوئی متفقہ قانون کی سفارش کرتی؟ نابالغوں کی شادی اور دوسری شادی کیلئے پہلی بیوی کی مرضی جاننا کیا صرف یہ پاکستان کے مسائل ہیں؟

Advertisements
Categories:

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s